Masihi Shayari - PROMOTING MASIHI SHAYARI
Download Urdu Font

Umeed-e-Sehar | اُمیدِ سحر

Maaa ki aghosh mein sar rakhty hain
Wohi jo umeed-e-sehar rakhty hain

Sada jo dosti ke pekar hon
Apnay dushman ki khabar rakhty hain

Masih ke pero ban gaye hain jo bhi
Eik dildoz hunar rakhty hain

Mohabbat jinka maqsad ban gaya ho
Wohi sooli peh sabar rakhtay hain

Sabar seekho hawa ke panchiyon se
Shakh barh jaye to ghar rakhty hain

Hayat-e-lazawal pa gaye woh
Masiha ki jo dagar rakhty hain

Zamana kyoun bhala badlay na Tahir
Hum bhi lafzon mein asar rakhty hain

ماں کی آغوش میں سر رکھتے ہیں
وہی جو امیدِ سحر رکھتے ہیں

سدا جو دوستی کے پیکر ہوں
اپنے دشمن کی خبر رکھتے ہیں

مسیح کے پیرو بن گئے ہیں جو بھی
ایک دِلدوز ہُنر رکھتے ہیں

مُحبت جن کا مقصد بن گیا ہو
وہی سُولی پہ صبر رکھتے ہیں

صبر سیکھو ہوا کے پنچھیوں سے
شاخ بڑھ جائے تو گھر رکھتے ہیں

حیاتِ لازوال پا گئے وہ
مسیحا کو جو ڈگر رکھتے ہیں

زمانہ کیوں بھلا بدلے نا طاہر
ہم بھی لفظوں میں اثر رکھتے ہیں

© 2011 Tahir Masih

Login Form