Masihi Shayari - PROMOTING MASIHI SHAYARI
Download Urdu Font

Sachai Ki Pehchan | سچائی کی پہچان

Hum shehar ki kali taron mein ek deep jalanay niklay hain
Is nafrat mein mohabbat ka pegham sunanay niklay hain

Kya khof hi hum ko marnay ka hum mar ke zindah rehty hain
Hum moat ki adi mein zindah sansar bananay niklay hain

Ab gard gunah ki miti ki ghabrauy gi katraye ge
Hum hath mein apni dhaal liye tofan thamany niklay hain

Jab pooja ki becheni mein hukam-e-Yessu ne samjhaya
To chorh ke apni pooja ko hum yar mananay niklay hain

Ghafil hain log zamanay ke is faani jhooti basti mein
Hum jhooton ko sachai ki pehchan karanay niklay hain

ہم شہر کی کالی راتوں میں اِک دیپ جلانے نکلے ہیں
اس نفرت میں محبت کا پیغام سُنانے نکلے ہیں

کیا خوف ہے ہم کو مرنے کا ہم مر کے زندہ رہتے ہیں
ہم موت کی وادی میں زندہ سنسار بنانے نکلے ہیں

اب گرد گُناہ کی مِٹی کی گھبرائے گی کترائے گی
ہم ہاتھ میں اپنی ڈھال لئے طوفان تھمانے نکلے ہیں

جب پُوجا کی بے چینی میں حُکمِ یسوع نے سمجھایا
تو چھوڑ کے اپنی پُوجا کو ہم یار منانے نکلے ہیں

غافِل ہیں لوگ زمانے کے اس فانی جھوٹی بستی میں
ہم جھوٹوں کو سچائی کی پہچان کرانے نکلے ہیں

© 2011 Tahir Masih

Login Form