Masihi Shayari - PROMOTING MASIHI SHAYARI
Download Urdu Font

Dastan-e-Saleeb | داستانِ صلیب

( 7 Votes )

Kash ke mein Yesu ki saleeb ke samnay hota
Jab Woh masloob hua mujhe karab ka andazah hota

Keel thonkanay ki awazein aur thathon mein bhi urta
Kanon se sunta apni ankhon se dekhta aisa hota

Korhon say audhartay lotharay jo giray thay wahan
Ek ek mein palkon se chunta yeh mumkin hota

Pasli se behtay khoon aur pani ki dhara mein
Mein dhul jata kirmazi gunahon se chutkara bhi hota

Bay rehmi ki tamam tar dastan jo raqm hui
Is dastan-e-ranj o alm ko bayan kernay wala hota

Yesu ne "Aye Bap in ko muaf ker" kehtay huay
Muaf ker dia, esa hota auron mein bhi hota

Tariq tafarkay hotay na larai jhagray na qatl-o-fasad
Mauaf kertay insan agar, dunya aman ka gehwara hota

کاش کہ میں یسوع کی صلیب کے سامنے ہوتا
جب وہ مصلوب ہوا مجھے کرب کا اندازہ ہوتا

کیل ٹھونکنے کی آوازیں اور ٹھٹھوں میں بھی اڑتا
کانوں سے سنتا اپنی آنکھوں سے دیکھتا ایسا ہوتا

کوڑوں سے ادھڑتے لوتھڑے جو گرے تھے وہاں
ایک ایک میں پلکوں سے چنتا یہ ممکن ہوتا

پسلی سے بہتے خون اور پانی کی دھارا میں
میں دھُل جاتا کرمزی گناہوں سے چھٹکارا بھی ہوتا

بے رحمی کی تمام تر داستان جو رقم ہوئی
اس داستانِ رنج و الم کو بیان کرنے والا ہوتا

یسوع نے ُاے باپ ان کو معاف کرٰ کہتے ہوئے
معاف کر دیا، ایسا ہوتا اوروں میں بھی ہوتا

طارق تفرقے ہوتے نہ لڑائی جھگڑے نہ قتل و فساد
معاف کرتے انسان اگر، دنیا امن کا گہوارہ ہوتا

© 2011 Samson Tariq

Add comment


Security code
Refresh

Login Form