Masihi Shayari - PROMOTING MASIHI SHAYARI
Download Urdu Font

Mata-E-Ulfat | متاع ِ اُلفت

( 1 Vote )

Munaji tumhara sayah sar per agar rahya
Mehshar ka mujh ko kesy khof-o-khatar rahay

Dushman ka bhi bhala ho kerta hon yeh dua
Mere dua Khudaya nah be-asar rahay

Jin rehbaron peh mein ne aksar kiya bharosah
Mere taraf se aksar woh be-khabar rahay

Chodah mukam aye thay rah-e-saleeb mein
Har ek mukam per Masiha be-zarar rahay

Tareek morh atay hi janay kahan gaye
Jo sath meray roshni mein hamsafar rahay

Likhna mera payam yeh jal-li haroof mein
Banto mata-e-ulfat maqdoor gar rahay

Apnay bayan mein rakhna yeh bhi zara Khayal
Keh shayari mein tere lutaf-o-asar rahay

مُنجی تُمہارا سایہ سر پر اگر رہے
محشر کا مجھ کو کیسے خوف و خطر رہے

دُشمن کا بھی بھلا ہو کرتا ہُوں یہ دعا
میری دُعا خُدایا نہ بے اثر رہے

جن رہبروں پہ میں نے اکثر کیا بھروسہ
میری طرف سے اکثر وہ بے خبر رہے

چودہ مقام آئے تھے راہِ صلیب میں
ہر اک مُقام پر مسیحا بے ضرر رہے

تاریک موڑ آتے ہی جانے کہاں گئے
جو ساتھ میرے روشنی میں ہمسفر رہے

لِکھنا مرا پیام یہ جلّی حرُوف میں
بانٹو متاعِ اُلفت مقدُور گر رہے

اپنے بیاں میں رکھنا یہ بھی ذرا خیالؔ
کہ شاعری میں تیری لُطف و اثر رہے

© 2003 Khayal Hoshiarpuri

Add comment


Security code
Refresh

Login Form