Masihi Shayari - PROMOTING MASIHI SHAYARI
Download Urdu Font

Becharon Ka Charah | بیچاروں کا چارہ

( 3 Votes )

Jis ki janib ibn-e-Maryam ka ishara ho gaya
Zaray se khurshid, shabnam se shararah ho gaya

Ghaas per laitay huay bachay ki azmat dekhiye
Woh jo becharah tha becharon ka charah ho gaya

Behar-o-bar mein Ous ke paon larkhara sakty nahi
Zindagi mein Nasiri jis ka sahara ho gaya

Jo Tere kadmon mein aya sar bulabndi pa gaya
Jo Tere manjadhar mein dooba nikarah ho gaya

Ek saraye mein jagah na thi Zia jis ke liye
Woh shehanshahon ki kismet ka sitarah ho gaya

جِس کی جانب ابنِ مریم کا اشارہ ہوگیا
ذرے سے خورشید، شبنم سے شرارہ ہوگیا

گھاس پر لیٹے ہوئے بچے کی عظمت دیکھیے
وہ جو بے چارہ تھا بیچاروں کا چارہ ہو گیا

بحروبر میں اس کے پاﺅں لٹرکھٹرا سکتے نہیں
زِندگی میں ناصری جس کا سہارا ہوگیا

جو تیرے قدموں میں آیا سربُلندی پا گیا
جو تیری منجدھار میں ڈُوبا کنارہ ہوگیا

اِک سرائے میں جگہ نہ تھی ضیا جس کے لیے
وہ شہنشاﺅں کی قسمت کا ستارہ ہوگیا

© K. R. Zia

Login Form