Masihi Shayari - PROMOTING MASIHI SHAYARI
Download Urdu Font

Ashk | اشک

( 5 Votes )

(Central idea taken from Sela's English track, "All My Tears".)

Mere  liay na ashk bahana jab mein addam sudharon
Ja kar baap elahi ki qurbat mein jah mein paoon

Mein apni roh k tan par jo zakhm liay jata hoon
Wasl mera jab baap se hoga sukh hi sukh mein paoon

Arz-o-saman ye shams-o-qamar sub fani cheezein hain
Kahilq ne farmaya, mein sub dah kar naya banaoon

Apni khalqat ko wo malik naam bnaam hai janay
Os ki pak hazoori mein kyon jatay hoey sharmaoon

Kis mitti mein kahan pe mujh ko dafan karo gy os din
Zeest se pa kar azadi mein daes ko apnay jaoon

Paoon mein aram kahin bhi iss jeevan se thak kar
Ashk dhulein gy Roh-e-Pak se khushion se bhar jaoon

Sona chandi, zarr ki jhalak sub nazar ko kheera kar dein
Inn fani beqadar qabahat se kyon mann ko lagaoon

Aao qurb Masiha mein, bemol sabhi tum khaoo
Ab-e-zeest se pyass bhuja loon, kyon pyasa reh jaoon

Mitti ka insaan azal se mitti mein mill jaey
Tum na ashk bahana mujh par, des ko jab mein  jaoon

(اس غزل کا مرکزی خیال سیلا کے انگلش ٹریک " All My Tears"سے لیاگیا ہے)

میرے لئے نہ اشک بہانا جب میں عدم سُدھاروں
جاکر باپ الہٰی کی مَیں قُربت میں جاہ پاﺅں
....٭....
میں اپنی روح کے تن پر جو زخم لئے جاتا ہوں
وَصل میرا جب باپ سے ہوگا سُکھ ہی سُکھ میں پاﺅں
....٭....
ارض و سماں یہ شمس و قمر سب فانی چیزیں ہیں
خالق نے فرمایا، میں سب ڈھا کر نیا بناﺅں
....٭....
اپنی خلقت کو وہ مالک نام بنام ہے جانے
اُس کی پاک حضوری میں کیوں جاتے ہوئے شرماﺅں
....٭....
کس مٹی میں کہاں پہ مجھ کو دفن کرو گے اُس دن
زیست سے پاکر آزادی میں دیس کو اپنے جاﺅں
....٭....
پاﺅں میں آرام کہیں بھی اِس جیون سے تھک کر
اشک دُھلیں گے روحِ پاک سے خوشیوں سے بھر جاﺅں
....٭....
سونا، چاندی، زر کی جھلک سب نظر کو خیرہ کردیں
ان فانی بے قدر قباحت سے کیوں من کو لگاﺅں
....٭....
آﺅ قُرب مسیحا میں، بے مول سبھی تم کھاﺅ
آبِ زیست سے پیاس بُجھالوں، کیوں پیاسا رہ جاﺅں
....٭....
مٹی کا انسان ازل سے مٹی میں مل جائے
تم نہ اشک بہانا مجھ پر، دیس کو جب میں جاﺅں

© 2010 Amer Zareen

Add comment


Security code
Refresh

Login Form